پیر 19 نومبر 2018ء
پیر 19 نومبر 2018ء

بھارتی جارحیت بند نہ ہوئی تو ہم مقابلہ کریں گے ، وزیراعظم آزادکشمیر

اسلام آباد( دھرتی نیوز)وزیراعظم آزاد حکومت ریاست جموں و کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا کہ لائن آف کنٹرول پر بھارتی فوج نہتے شہریوں کو جارحیت کا نشانہ بنا رہی ہے ایل او سی پر بھارت کی طرف سے بلا اشتعال فائرنگ پاک بھارت جنگ چھڑنے کا سنگین خطرہ پیدا ہو سکتا ہے لائن آف کنٹرول پر بھارتی جارحیت کا مقصد مقبوضہ جموں و کشمیر میں قابض بھارتی افواج کی انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں پر پردہ ڈالنے کی ناکام کوشش ہے بھارت نے ایل او سی پر فائرنگ بند نہ کی تو پھر ہم اس کا مقابلہ کریں گے اور میں خود لڑائی لڑوں گا ہندوستان ہماری امن کی پالیسی کو کمزوری نہ سمجھے۔پاکستان اور کشمیر ایک دوسرے کا لازمی حصہ ہیں۔ مسئلہ کشمیر بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ ہے اور کشمیر پر اقوام متحدہ کی متعدد قراردادیں موجود ہیں عالمی برادری نے کشمیریوں کو استصواب رائے کا حق دینے کا وعدہ کر رکھا ہے کشمیر اور پاکستان لازم و ملزوم ہیں پاکستان دنیا میں کشمیریوں کا واحد وکیل ہے پاکستان نے ہمیشہ کشمیریوں کے حق خودارادیت کی سیاسی سفارتی اور اخلاقی حمایت کی پاکستان آزادکشمیر کی ترقی عوامی خوشحالی کے لیے وافر مقدار میں بجٹ مہیا کر رہا ہے پاکستان کی فوج کا شمار دنیا کی بہترین افواج میں ہوتا ہے افواج پاکستان پر فخر ہے پاکستانی فوج انسانی اقدار کی محافظ ہے افواج پاکستان نے لائن آف کنٹرول پر کبھی دوسری طرف کی سول آبادی کو نشانہ نہیں بنایا پاکستانی فوج بھارتی جارحیت کا جواب دیتی ہے اور بھارتی فوج کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے زیر اہتمام نیشنل سیکیورٹی اینڈ وارکورس کے شرکاءکو بریفنگ دیتے ہوئے کیا اس موقع پر 41ممالک سے تعلق رکھنے والے فوجی آفیسران موجود تھے بریفنگ اور ورکشاپ کا انعقاد این ڈی یو نے کیا تھا وزیراعظم آزادکشمیر کا کہنا تھا کہ ایل او سی پر نہتے افراد بھارتی جارحیت کا نشانہ بن رہے ہیں قابض بھارتی فوج نہتے سویلین کو دہشتگردی کا نشانہ بنا رہی ہے بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں تعینات 7لاکھ فوج کو کشمیریوں کے قتل عام کی کھلی چھوٹ دے رکھی ہے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں میں مصروف ہے نہتے عوام پر طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا جا رہا ہے پیلٹ گن کے ذریعے مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں ،بچوں ،عورتوں ،بوڑھوں ہر عمر کے افراد کو اپاہج بنایا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ کشمیر تقسیم بر صغیر کا نامکمل ایجنڈا ہے بھارت نے جبر کے زور پر مقبوضہ کشمیر پر قبضہ کر رکھا ہے کشمیریوں نے بھارت نے جبری قبضہ مسترد کر دیا ہے اور بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ اپنے پیدائشی حق ،حق خود ارادیت کے لیے پرامن جدوجہد کر رہے ہیں لیکن بھارتی افواج کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو دبانے کے لیے طاقت کا وحشیانہ استعمال کر رہی ہے جس کا عالمی برادری کو نوٹس لینا چاہیے وزیراعظم آزادکشمیر کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات اسی صورت میں معمول پر آسکتے ہیں جب مسئلہ کشمیر حل ہو گا مسئلہ کشمیر حل کیے بغیر دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کی بہتری ممکن نہیں دنیا کو یہ بات سمجھنی چاہیے کہ جنوبی ایشیاءمیں امن کے قیام کے سارے راستے کشمیر سے ہو کر گزرتے ہیں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عمل درآمد ہی مسئلہ کشمیر کا حل ہے انہوں نے کا کہ پاکستان کشمیریوں کا مسیحا ہے ہر مشکل وقت میں پاکستان نے کشمیریوں کی دل کھول کر مدد کی آزادکشمیر کی ترقی اور خوشحالی کے لیے پاکستان کی طرف سے ضرورت سے زیادہ وسائل مہیا کیے جا رہے ہیں