هفته 22  ستمبر 2018ء
هفته 22  ستمبر 2018ء

متاثرین ایل اوسی یکجہتی مارچ کے انتظامات مکمل ،سیکورٹی فورسز الرٹ

  راولاکوٹ ( دھرتی نیوز ) جموں کشمیر لبریشن فرنٹ ( جے کے ایل ایف ) نے آج 16مارچ کو متاثرین ایل او سی یکجہتی مارچ کا اعلان کر رکھا ہے ، خود مختار کشمیر کی حامی بعض دیگر سیاسی جماعتوں جن میں نیشنل عوامی پارٹی ( نیپ ) سر فہرست ہے نے جے کے ایل ایف کے مارچ کی حمایت کی ہے جبکہ میرپور اور پونچھ ڈویژن کی انتظامیہ نے امن امان برقرار رکھنے کیلئے سخت حفاظتی اقدامات کر رکھے ہیں اور پولیس کی اضافی نفری بھی طلب کی گئی ہے ، جے کے ایل ایف کا یہ ” یکجہتی مارچ “ ضلع کوٹلی اور ضلع پونچھ کے دامن میں واقع شہر تتہ پانی سے شروع ہو گا اور مدارپور تک جاری رہے گا جہاں ایک جلسہ عام کا بھی اعلان کیا گیا ہے ، یکجہتی مارچ جس سے راستے سے گزر کر مدارپور جائے گا یہ راستہ ایل او سی کے قریب ہے اور گزشتہ کئی مہینوں سے ان علاقوں میں کشیدگی پائی جاتی ہے اور فائرنگ سے کئی شہری شہید ، زخمی ہو چکے ہیں ، دو دن پہلے اقوام متحدہ کے مبصرین کی موجودگی میں بھی فائرنگ کر کے دو شہریوں کو زخمی کیا گیا ہے ، جے کے ایل ایف کے ایک اہم رہنماءڈاکٹر توقیر گیلانی نے بتایا کہ ان کا مارچ پر امن ہو گا اور یہ متاثرین ایل او سی سے یکجہتی کیلئے کیا جا رہا ہے تا ہم اگر پر امن مارچ کو روکنے کی کوشش کی گئی تو حالات خراب ہونے کی ذمہ دار حکومت ہو گی انہوں نے الزام عائد کیا کہ ان کے کارکنان کو میرپور ڈویژن کی حدود میں روکنے کیلئے ناکہ بندی کی گئی ہیں تا ہم ڈی آئی جی میرپور ڈویژن راشد نعیم نے ان الزامات کی تردید کی ہے اور کہا کہ پورے ڈویژن میں کوئی ناکہ بندی نہیں کی گئی ، دریں اثناءایس ایس پی پونچھ یسیٰن بیگ نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ جلوس کے منتظمین نے پر امن رہنے کی یقین دہانی کروائی ہے تا ہم ہم نے حفاظتی اقدامات پہلے سے کر رکھے ہیں ۔