پیر 19 نومبر 2018ء
پیر 19 نومبر 2018ء

بلدیاتی الیکشن کیلئے ایک سال کا عرصہ درکار ہے ، چیف الیکشن کمشنر

   پلندری (ڈسٹرکٹ رپورٹر ) چیف الیکشن کمشنر جسٹس مصطفی مغل نے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات صاف و شفاف کرانے کے لیے ایک سال کا عرصہ درکار ہے فوری انتخابات پرانی حلقہ بندیوں اور فہرست کے مطابق ہو سکتے ہیں حلقہ بندیوں کے متعلق عدالتوں میں مقدمات زیر سماعت ہیں جس کو یکسو کرنے فہرستوں میں نئے اندارج مردم شماری کے مطابق یونین کونسلز کااضافہ شامل ہے ان خیالات کا اظہار اُنھوں نے جسٹس سردار عبدالحمید خان کی ہمشیرہ کی وفات پر تعزیت کے بعد میڈیا نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اُنھوں نے کہا کہ کسی بھی کام کو کرنے سے پہلے اس کے بنیادی اسٹریکچرکو کنکریٹ ہونا چاہیے تاکہ اس میں کوئی خرابی نہ ہو صاف شفاف انتخابات کے لیے بنیادی چیزفہرستیںہیں کیونکہ جب آپ حق رائے دہی دیتے ہیں تو اس سے کوئی بھی محروم نہیں ہونا چاہیے اسی طرح حلقہ بندی کے خلاف ہائی کورٹ میں اعتراضات داخل ہوئے مردم شماری کے مرکزی اعلان کے بعد قواعد کے مطابق حلقہ بندی ہونا ہے ایک سوال کے جواب میں اُنھوں نے کہا کہ چیف الکیشن کمر کی سربراہی میں الیکشن ہوں گے ابھی تک فنڈز کی منتقلی نہیں ہوئی پرانی فہرستوں کو حلقہ بندی کے مطابق ترتیب کا ابتدائی کام ہو رہا ہے دوسرے مرحلہ میں نئے ووٹر کا اندراج ہو گا نادرا سے تصدیق ہو گی جس کے لیے وقت درکار ہے۔