پیر 19 نومبر 2018ء
پیر 19 نومبر 2018ء

ججوں سے متعلقہ ریمارکس پر سردار خالد ابراہیم خان کی سپریم کورٹ طلبی

  مظفرآباد(دھرتی نیوز)آزادجموں وکشمیرسپریم کورٹ نے سردار خالد ابراہیم خان ممبر قانون ساز اسمبلی آزادجموں وکشمیر کو عدالت سے متعلقہ دیئے گے ایک متنازعہ بیان کے بعدنوٹس جاری کر کے انہیں 5جون 2018ءکو وضاحت کرنے کے لیے عدالت میں طلب کر لیا۔محکمہ اطلاعات آزاد کشمیر کی جانب سے جاری خبر کے مطابق انہیں سپریم کورٹ آزادجموں وکشمیر کے سینئر جج جسٹس راجا سعید اکرم خان نے طلب کیا ہے۔خبر میں یہ نہیں بتایا گیا کہ ان کے کون سے بیان یا تقریر کے بعد یہ قدم اٹھایا گیا ہے لیکن زیادہ امکان یہ ہے کہ آزادجموں قانون ساز اسمبلی کے حالیہ بجٹ اجلاس میں کی گئی اس تقریر کے بعد یہ قدم اٹھایا گیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ ہائی کورٹ آزاد کشمیر میں کی گئی حالیہ ججز کی تقریاں سیاسی بنیادوں پر کی گئی ہیں۔محکمہ اطلاعات آزاد کشمیر کی جانب سے ہی جاری کی گئی بجٹ اجلاس کی خبر کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ” ہم سب پاک فوج کے ساتھ ہیں لیکن پاک فوج کی سیاسی پالیسیوں کے خلاف ہیں “۔سپریم کورٹ کی جانب سے جاری نوٹس میں ان کی اس تقریر کا حوالہ نہیں دیا گیا صرف اتنا کہا گیا ہے کہ ”یہ کارروائی سپریم کورٹ آزادجموں وکشمیر کے سینئر جج جسٹس راجا سعید اکرم خان نے کی ہے“۔نوٹس کے مطابق انہیں 5جون 2018ءکو عدالت میں پیش ہو کر وضاحت کرنے کے لیے کہا گیا ہے۔سردار خالد ابراہیم خان جو کہ سیاسی جماعت جموں و کشمیر پیپلز پارٹی کے صدر بھی ہیں کی طرف سے فوری طور پر کوئی رد وعمل سامنے نہیں آیا ہے۔