پیر 24 جون 2019ء
پیر 24 جون 2019ء

راولاکوٹ میں اندھے قتل کا معمہ حل، سترہ سالہ نوجوان نے اعتراف جرم کر لیا

راولاکوٹ(دھرتی نیوز)راولاکوٹ پوٹھی بالا سے تعلق رکھنے والے نعمان خالق کے قاتل نے اقرار جرم کر لیا ، قاتل سلمان الطاف اس کا پڑوسی نکلا ، قاتل میڈیکل کے ڈپلومہ کا طالب علم ہے جس کی عمر سترہ سال ہے ، سلمان الطاف جو اس وقت سٹی تھانہ راولاکوٹ میں بند ہے کا کہنا ہے کہ مقتول نعمان خالق اسے بلیک میل کرتا رہا ، اس کی برہنہ تصاویر اور ویڈیو زبنا رکھی تھی اور اسے بلیک میل کر کے اس سے منشیات فروشی کا دھندہ کرواتاتھا ۔اس کیس کی تفتیش ایس ایچ او انسپکٹرطارق محمود کررہے تھے ۔ بدھ کے روز ایس ایس پی پونچھ چوہدری محمد امین نے صحافیوں کو تفصیلات سے آگا ہ کرتے ہوئے کہا کہ 2اکتوبر 2018کو نعمان خالق گھر سے کسی دوست سے ملنے کا کہہ کر نکلا اور واپس نہ آیا ، نعمان خالق کے ورثاء نے 5اکتوبر 2018کو تھانے میں نعمان خالق کی گمشدگی کی رپورٹ دی ، پولیس تلاش کرتی رہی لیکن نعمان خالق کا سراغ نہیں ملا ، مقتول نعمان خالق کے والد کی رپورٹ پر 3نومبر 2018کو ایف آئی آر درج کی گئی ۔اور پولیس تھانہ راولاکوٹ نے ابتدائی تفتیش عمل میں لائی بعد میں اس مقدمہ کو انسپکٹر طارق محمود جو اس وقت ایس ایچ او تھانہ بلوچ ہیں کہ سپرد کی گئی ۔ 6دسمبر 2018کو گوئیں نالہ روڈ ٹھنڈی کسی کے قریب سے کچرے کا کاروبار کرنے والے پٹھانوں نے بوری میں نعش دیکھ کر پولیس کو اطلاع دی جس پر پولیس نے موقع پر جا کر نعش بر آمد کر کے شیخ زید ہسپتال پہنچائی ، نعش مکمل طور پر گل سڑچکی تھی ورثاء نے کپڑوں اور جرابوں سے نعش کی شناخت کی ۔نعش کو پوسٹ مارٹم کے بعد ورثاء کے حوالے کیاگیا ۔گرفتار ملزم سلمان الطاف نے دوران تفتیش اقرار جرم کرتے ہوئے بتایا کہ مقتول نعمان خالق نے اس کی برہنہ تصاویر اور ویڈیوز بنا رکھی تھی اور اسی بنا پر وہ اسے بلیک میل کر کے اس سے منشیات فروشی کرواتا تھا ۔سلمان الطاف کا کہنا ہے کہ نعمان خالق نے نہ صرف مجھے بلیک میل کیا بلکہ کچھ عرصہ قبل سے وہ میری بہن جو کہ ڈی فارمیسی کی ساتویں سمسٹر کی طالبہ ہے کو بھی بلیک میل کرنا شروع کر دیا ۔اس نے بتایا کہ 2اکتوبر کی رات کو ہمارے گھر چلا گیا اور کہنے لگا کہ وہ اس کی بہن کو ساتھ لے جائے گا ۔ اور اگر ایسا نہیں کرنے دیتے تو میں وہ برہنہ تصاویر اور ویڈیوز انٹر نیٹ پر اپ لوڈ کر دے گا ، پھر اس نے کہا کہ میں رات کو آپ کے گھر گزاروں گا جس پر میں نے نعمان خالق کو گھر کے ساتھ ہی بنے ایک کمرے میں جگہ بنا کر دی جہاں اس نے رات گزاری ، مقتول نعمان نشے میں تھا ، قاتل نے انکشاف کیاکہ نعمان خالق کا قتل اس کے اپنے ہی پستول سے کیاگیا ۔ سلمان الطاف کا کہنا ہے کہ سلمان الطاف کے قتل میں میری معاونت میری بہن نے کی ، اسے ٹھکانہ لگانے کے بعد اسی رات کو اس کی نعش گاڑی میں ڈال کر اور بوریوں میں بند کر کے ذبحہ خانے سے نیچے گرا دی ۔ایس ایس پی پونچھ چوہدری امین نے نے صحافیوں کو بتایا کہ اس کیس کی پہلی تفتیش اے ایس آئی شاہد اقبال کے پاس تھی بعد میں ڈی آئی جی پونچھ نے مقدمہ کی تفتیش انسپکٹر اعجاز کو منتقل کی ، نعمان خالق کے ورثاء کے مطالبہ پر مقدمہ کی تفتیش انسپکٹر طارق کے سپرد کی گئی ۔انہوں نے اس قتل کو ٹریس کرنے کیلئے جانفشانی کا مظاہرہ کیا ، انسپکٹر طارق کے ہمراہ پولیس ہلکاران محمد ذیشان ، عدنان برکت اور لیڈی کانسٹیبل نبیلہ اور ناصر شاہ نے بھی بھرپور کردار ادا کیا ۔

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم