بدھ 20 نومبر 2019ء
بدھ 20 نومبر 2019ء

قوم بھارت سے لڑنے کو تیار”ٹیپوسلطان“ انکاری ہے، سراج الحق

راولاکوٹ(اسٹاف رپورٹر) جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ہندوستان کے خلاف فتح یا شہادت تک لڑیں گے، کشمیریوں کا ساتھ دینا غدار ی ہے تو سب سے بڑا غدار میں ہوں،عمران خان نے  اگرہندوستان کے خلاف جہاد کا اعلان نہ کیا تو مچھروں سے لڑنا پڑے گا،پوری پاکستانی قوم جہاد کے لیے تیار ہے لیکن ٹیپو سلطان اسلام آباد میں ائیر کنڈیشن کمرے میں ہے،16کو اسلام آباد میں خواتین17کو علماء و مشائح اور 24کو کوٹلی میں اہم اعلان کروں گا،5اگست کے کراچی،لاہور،مظفرآباد،گلگت،پشاور،سرگودھا اور بڑے مقامات پر جلسے منعقد کیے 16اکتوبر کو اسلام آباد میں کشمیری مائیں بہنیں آزادکشمیر سے آکر وزیر اعظم ہاؤس اسلام آباد کے سامنے حکمرانوں کے ضمیروں کو جگانے کی کوشش کریں گی،علماء کرام کو اگھٹا کر کے مشاورت کریں گے پاکستان کی اقلیتوں کو جمع کر کے مشاورت کے بعد 24اکتوبر کو کوٹلی میں آخری لائحہ عمل کا اعلان کروں گا،ان خیالات کااظہار انہوں نے صابر شہید سٹیڈیم راولاکوٹ میں عزم جہاد کشمیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر سابق امراء عبدالرشید ترابی،سردار اعجاز افضل خان،جے آئی یوتھ پاکستان کے صدر زبیر گوندل،غلام محمد صفی،ارشد ندیم،نثار احمد شائق،سجاد انور،مسرور ظفر،سردار ذوالفقار،زاہد رفیق،قیوم افسر،ممتاز خان،مہران معروف سمیت دیگر قائدین نے خطاب کیا،کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ جہاد کا اعلان ریاست کی ذمہ داری ہے اگر حکمران جہاد نہیں کریں گے تو ہم ان حکمرانوں کے خلاف جہاد کا اعلان کریں گے،مقبوضہ کشمیر کے عوام کو یقین دلاتا ہوں کہ خون کے آخری قطرے اور زندگی کے آخری لمحہ تک کشمیریوں کے ساتھ ہیں،کشمیر آزاد ہو گا اور پاکستان کا حصہ بنے گا،انہوں نے کہاکہ آزادکشمیر کی حکومت جس کی قیادت فاروق حیدر کے ہاتھ میں ہے وہ جہاد کرنا چاہتے ہیں لائن آف کنٹرول کو کراس کرنا چاہتا ہوں مگر وزیر اعظم پاکستان عمران خان اجازت نہیں دیتا،سلطان ٹیپو کو ٹرمپ اجازت نہیں دیتا ہے میں کہنا چاہتا ہوں آپ نے ٹرمپ کو خوش کرنا ہے یا اللہ کو خو ش کرنا ہے انہوں نے کہاکہ وقت آگیا ہے کہ پاکستان کے حکمرانوں کو منافقت کا راستہ چھوڑنا پڑے گا سری نگر میں آج بھی جمعہ کی نماز ادا نہیں کرنے دی گئی 8واں جمعہ تھا جو لوگ مسجد میں پہنچ گے آنسو اور ڈنڈے کھا کر گے برہان مظفر وانی شہید سمیت پی ایچ ڈی سکالر شہداء اور مجاہدین،دوسری طرف ٹیپو سلطان ائیر کینڈیشن دفتر سے باہر آدھ گھنٹے کھڑے ہو کر فرض پورا کررہے ہیں کھڑے ہونے سے کشمیر آزاد نہیں ہو گا،انہوں نے کہاکہ فاروق حیدر خان نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر کی بیٹیاں صبح شام پاکستان کی طرف دیکھتی ہیں مگر مجھے شرمندگی ہے ہمارے حکمرانوں کی نگاہیں امریکہ کی نصرت پر پڑی ہیں،انہوں نے کہاکہ قائد اعظم نے فوج کو حکم دیا تھا کہ کشمیریوں کی مدد کے لیے جانا چاہیے مجبورا! قبائل کو لڑنا پڑا آج اللہ کا شکر ہے پاکستان کی فوج کی قیادت انگریز نہیں بلکہ جنرل باجوہ کے ہاتھ میں ہے باجوہ صاحب قائد اعظم کا حکم اسی طرح موجودہے پاکستان فوج کو مقبوضہ کشمیر کی عوام کوبچانے کے لیے جانا چاہیے کشمیریوں نے پاکستان کی محبت میں اپنا تن من دھن سب کچھ قربان کر دیا،شہداء کے جنازے پاکستانی پرچموں میں دفن کیے جاتے ہیں خون کے نذرانے پیش کیے،ماؤں بہنوں بیٹیوں نے عزتوں کی قربانی پیش کی