بدھ 03 جون 2020ء
بدھ 03 جون 2020ء

جموں کشمیر ڈیموکریٹک پارٹی کے نام سے نئی سیاسی جماعت کا قیام، نبیلہ ارشاد ایڈووکیٹ چیئرپرسن نامزد

اسلام آباد( دھرتی نیوز) جموں کشمیر پیپلز پارٹی کی سابق مرکزی سیکر ٹری جنرل و سینئر نائب صدر نبیلہ ارشاد ایڈووکیٹ نے ہم خیال سیاسی کارکنان سے مشاورتی اجلاس کے بعد ”جموں کشمیر ڈیموکریٹک پارٹی“ کے نام سے نئی سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کیا ہے۔نئی سیاسی جماعت کے قیام کا اعلان انہوں نے پیر کونیشنل پریس کلب اسلام آباد میں مشاورتی اجلاس کے بعد ایک پریس کا نفرنس میں کیا ہے۔اس دوران ان کے ہمراہ معروف مصنفہ و ڈرامہ نویس محترمہ رابعہ رزاق، راجہ اظہر حیات، کمانڈر سردار ذاکر خان، غازی نسیم رضا، خالد یوسف چوہدری ایڈووکیٹ، عائشہ مصطفیٰ ایڈووکیٹ سمیت اہم افراد سٹیج پر بیٹھے تھے جبکہ کارکنان کی ایک بڑی تعداد اجلاس اور بعد ازاں پریس کانفرنس میں شریک رہی۔ نبیلہ ارشاد ایڈووکیٹ نے کہا کہ تین دہائیاں قبل جموں کشمیر پیپلز پارٹی وجود میں آئی تھی اور اس پارٹی میں سردار خالد ابراہیم خان کی وفات کے بعد ایک بڑا خلا ء پیدا ہو چکا ہے، جس سے پارٹی کے نظریات کو شدید نقصان پہنچا ہے، سردار خالد ابراہیم خان سیاسی طور پر صاف و شفاف کردار کے مالک تھے کوئی بھی شخص سردار خالد ابراہیم کے کردار اور نظریات پر انگلی نہیں اٹھا سکتا-نبیلہ ارشاد نے کہا کہ میرے خاندان کی چوتھی نسل اس جماعت سے وابسطہ رہی ہے،سردار خالد ابراہیم خان کی وفات کے بعد پارٹی غیر جمہوری روایات پر چل پڑی اور میری پارٹی رکنیت غیر جمہوری اور غیر آئینی طریقے سے معطل کی گئی اور بعد میں پارٹی رکنیت کی منسوخی کا اعلان کیا گیا۔ الیکشن شیڈول جاری کرتے ہوئے یا شیڈول جاری ہونے کے بعد سیاسی جماعتوں میں اس طرح کی سرگرمیاں کبھی نہیں کی جاتیں،  جموں کشمیر پیپلز پارٹی میں سیاسی کارکنان سے غلاموں کی طرح برتاو کیا جا رہاہے، پارٹی رکنیت معطلی کے بعد مجھے بھی خاموشی اختیار کرنے کے مشورے دیئے گئے،  میری پارٹی رکنیت کومعطل اور منسوخ کرنے کے لیے گزشتہ چار، چھ ماہ سے سازش اور پلاننگ کی جاتی رہی-نبیلہ ارشاد خان نے کہا کہ  اس وقت جب تحریک آزادی کشمیر نازک ترین صورتحال میں ہے تو ہمیں  ایک ایسے سیاسی پلیٹ فار م کی ضرورت ہے جو اس وقت تحریک آزادی میں کردار ادا کرے-نبیلہ ارشاد نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 370 کے خاتمے کے بعد آزاد کشمیر سے جاندار آواز بلند نہیں کی، ہماری پارٹی سمیت دیگر تمام سیاسی جماعتیں مجرمانہ خاموش رہیں،  بدقسمتی سے ہم قائدانہ کردار ادا نہیں کر سکے -مقبوضہ کشمیر والوں کیلئے پاکستان کی سیاسی جماعتوں سمیت ہم سب نے کوئی سنجیدہ اقدامات نہیں کیے- ہم سب کو ایک نیا جمہوری پلیٹ فارم بنا نا ہو گااور اس کے لیے آج ہم سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کرتے ہیں اور اس نئی سیاسی جماعت کا نام”جموں کشمیر ڈیموکریٹک پارٹی“ ہو گا،میں تمام  ہم خیال کشمیریوں سے گزارش کرونگی کہ ہماری اس جماعت کے نظریے کاحصہ بنیں -میں آزادکشمیر کے عوام کو یقین دلاتی ہوں کہ یہ جماعت روایتی سیاست کا حصہ نہیں بنے گی-جموں کشمیر ڈیموکریٹک پارٹی کے اراکین نے پریس کانفرنس سے قبل مشاورتی اجلاس کیا جس میں نبیلہ ارشاد ایڈووکیٹ کو مرکزی چیئرپرسن بنانے کا اعلان کیا جبکہ پریس کانفرنس میں بتایا گیا کہ دیگر عہدیداران کا انتخاب پارٹی کی رکنیت سازی کے بعد کیا جائے گا۔ نبیلہ ارشاد ایڈووکیٹ نے پارٹی آئین سازی کیلئے کمیٹی بھی تشکیل دے دی ہے جس میں وکلا ء حضرات خالد یوسف چوہدری ایڈووکیٹ، عائشہ مصطفیٰ ایڈووکیٹ سمیت دیگر سینئر لوگ شامل ہیں۔واضع رہے کہ آزاد جموں و کشمیر الیکشن کمیش کے پاس موجودہ وقت چوالیس سیاسی پارٹیاں رجسٹرڈ ہیں  جبکہ بعض غیر رجسٹرڈ جماعتیں اس کے علاوہ ہیں۔یوں اگر یہ جماعت رجسٹرڈ ہوئی تو یہ پنتالیسویں سیاسی جماعت ہو گی۔      

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم