جمعرات 16  ستمبر 2021ء
جمعرات 16  ستمبر 2021ء

بنک ڈکیتی کے ملزمان کو چودہ سال قید کی سزا

باغ (افراز گردیزی  سے)ضلعی عدالت باغ نے UBL ڈکیتی کیس کا فیصلہ سنا دیا، ملزمان پیر محمد، خلیل کو مختلف دفعات کے تحت 14، 14 سال 10،10 سال، ایک ایک سال اور 5، 5 سال قید کی سزا اور ایک ایک لاکھ جرمانہ ادا کرنے کا حکم سنا دیا، 2 ملزمان شعیب اور صدام کو شک کا فائدہ دے کر بری کر دیا گیا، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج باغ آفتاب طارق میر اور منور حسین خورشید ضلعی قاضی باغ پر مشتمل عدالت نے سماعت مکمل ہونے پر مجرموں کو سزا سنا دی، UBL باغ برانچ میں گزشتہ سال ملزمان نے رات کے وقت سیکورٹی گارڈ کو بینک کا سامان دینے کے بہانے اندر داخل ہو کر کروڑوں روپے کی ڈکیتی کی واردات کی تھی اور فرار ہو گئے تھے جنہیں بعد میں پولیس نے گرفتار کر لیا تھا ملزمان کیخلاف ضلعی عدالت باغ میں مقدمہ زیر سماعت تھا جس کا آج فیصلہ سنا دیا گیا، عدالت نے جرم ثابت ہونے پر مجرم پیر محمد اور خلیل کو زیر دفعہ پی سی 458 چودہ، چودہ سال قید اور ایک ایک لاکھ جرمانہ،دفعہ اے پی سی 342 کے تحت ایک ایک سال قید اور 3، 3 ہزار جرمانہ، زیر دفعہ اے پی سی 395 دس، دس سال قید سخت اور ایک ایک لاکھ جرمانہ کی سزا سنائی ہے، عدم ادائیگی جرمانہ کی صورت میں دونوں مجرمان کو مزید 6،6 ماہ قید بھگتنا ہو گی، دونوں مجرموں کو زیر دفعہ اے پی سی 109 پانچ، پانچ سال کی سزا سنائی گئی ہے، مجرم پیر محمد کو زیر دفعہ اے اے 15/ اے 2 کے تحت 4 سال قید اور 50 ہزار روپے جرمانہ کی سزا سنائی گئی ہے، عدم ادائیگی جرمانہ کی میں مجرم کو ایک ماہ مزید قید بھگتنا ہو گی، جملہ جرمانہ کی رقم داخل خزانہ سرکار کی جائے گی، ہر دو مجرمان کو ضابطہ فوجداری بی 382 کا استفادہ دیا گیا ہے،عدالت نے قرار دیا ہے کہ دیگر  ملزمان  خانہ نمبر 2 کی حد تک مقدمہ تا دستیابی داخل دفتر رکھا جاتا ہے، مجرمان جملہ سزائیں ڈسٹرکٹ جیل باغ میں برداشت کریں گے، مجرمان کی جملہ سزائیں بیک وقت شروع ہوں گی، عدالت نے ملزمان شعیب اور صدام کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کر دیا، ہر دو ضبط شدہ گاڑیاں رجسٹریشن بکس دکھانے کے بعد مالکان کو واگزار کی جانے، 9 ایم ایم پستول معیاد گزرنے کے بعد تحت ضابطہ نیلام کر کے رقم خزانہ میں جمع کرائے جانے کا حکم، ملزمان سے برآمد ہونے والی رقم پہلے ہی اصل مالکان کو واگزار ہو چکی ہے اس نسبت مزید کسی حکم کی ضرورت نہیں ہے، دیگر ضبط شدہ سامان باقی ملزمان کی دستیابی تک بدستور ضبط رہے گا،  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم