پیر 25 اکتوبر 2021ء
پیر 25 اکتوبر 2021ء

بلال صدیق قتل کیس،ایف آئی ار میں 10 ملزمان نامزد،3 گرفتار

راولاکوٹ(دھرتی نیوز)راولاکوٹ کے نواحی گاؤں کھڑک میں قتل کی لرزہ خیزواردات میں بلال صدیق نامی نوجوان  کے قتل کے الزام میں مقتول کے بھائی حارث خان کی درخواست پردس افرادکے خلاف ایف آئی ار درج کرلی گئی ہے جن میں سے تین ملزمان گرفتار کر لیے گے۔ گرفتار ہونے والوں میں،محمودعارف،زاہدعارف پسران محمدعارف اور عبدالوددوعرف فرہادعلی خان(سابق چیئرمین پی ڈی اے)شامل ہیں۔دیگر ملزمان کی گرفتاری کے لئے پولیس چھاپے ماررہی ہے۔ایف آئی ار میں دفعہ  34APCدرج کروایا گیاہے جس میں دس ملزمان کونامزدکیاگیاہے۔جن ملزمان کونامزدکیاگیاہے ان میں حسام محمود،طلحہ محمود،ارقم محمودپسران محمودخان، شعیب عارف عرف اکبرولدمحمدعارف،اسامہ زاہدولدمحمدزاہد،محمودعارف،زاہدعارف پسران محمدعارف عبدالوددوعرف فرہادعلی خان(سابق چیئرمین پی ڈی اے)محمدفہدخالدولدخالدساکن متیال میرہ کونامزدکیاگیاہے۔ایف آئی آرکی درخواست میں کہاگیاہے کہ ملزمان حسام محموداوراس کے بھائیوں اورشعیب عارف واسامہ زاہدمنصوبہ بندی سے گھات لگاکراسلحہ آتشی سے مسلح ہوکرراستے میں چھپے ہوئے تھے کہ بوقت چار بج کر پچیس منٹ پرجب مقتول مسجدکے قریب سڑک پرپہنچاتوملزمان نے مقتول پرپستول سے بنیت ہلاکت نشانہ باندھ کرسامنے سے چھاتی پرفائرکیے۔یہ فائرحسام محمودنے کیے جبکہ دیگرپانچ ملزمان نے رپیٹرسے نشانہ باندھ کربلال صدیق کی پیٹھ پراندھادھندفائرنگ کی جس سے وہ شدیدزخمی ہوگیابقیہ ملزمان اسلحہ آتشی سے مسلح تھے اوربرابربلال صدیق پرفائرنگ کررہے تھے۔بلال صدیق نے شدیدزخمی ہونے کے باوجوملزم حسام محمودکوپکڑلیااوربازارکے چوکیدارظریف عرف مناکوزورزورسے آوازیں دے کربتایاکہ حسام محمودنے اسے گولیاں ماری ہیں اورمیں نے اس کوپکڑاہواہے فائرنگ اورشورشرابہ کی آوازیں سن کرشاہدفاروق،طارق علی، محمدجاوید،حلاش طاہر،عدنان جاویدموقع پرپہنچے اورواقعہ کوباچشم دیکھااسی دوران ملزمان فائرنگ کرتے ہوئے چونگی کی طرف بھاگ گے۔بلال صدیق کوشدیدزخمی حالت میں فوری طورپرسی ایم ایچ راولاکوٹ لایاگیامگروہ راستے میں ہی زخموں کی تاب نہ لاکرجاں بحق ہوگیا۔درخواست میں کہاگیاہے کہ وجہ عنادیہ ہے کہ ملزمان کی مقتول بلال صدیق کے ساتھ دشمنی چلی آرہی تھی پہلے سے ہی ایک مقدمہ زیرنمبر495/21درج تھانہ ہے۔ملزمان نے کالج کی لڑکیوں اوردیگرعورتوں کی ویڈیوزاورفوٹوزبنائی ہوئیں تھیں جس کامقدمہ ملزمان کے خلاف درج ہے اورانہی ویڈیوزاورفوٹوزکی وجہ سے ملزمان کی دکانات بھی سیل ہوئی ہیں۔ملزمان نے بھی بلال صدیق کے خلاف مقدمہ درج کروایاہواہے جس میں بلال صدیق ضمانت پررہاہے۔ملزمان نے یہ واقعہ دیگرملزمان محمودعارف زاہدعارف اورعبدالودودفرہادعلی کی اعانت اورمشورے سے کیاہے۔جبکہ فہدخالدولدخالدساکن متیال میرہ اوراس کے دیگررشتہ داران کی اعانت تعاون ومشورہ ملزمان کوحاصل ہے۔مقدمہ درج کرکے پولیس نے تفتیش شروع کردی ہے۔توقع ہے کہ جلدتمام ملزمان کوگرفتارکرلیاجائے گایہاں کے عوامی سیاسی وسماجی حلقوں نے مطالبہ کیاہے کہ اس دردناک واقعہ کے ذمہ داران کوفوری طورپرگرفتارکرکے پابندسلاسل کیاجائے اورانہیں قانونی سزادی جائے۔  

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم