بدھ 21 نومبر 2018ء
بدھ 21 نومبر 2018ء

چوہدری نثار کے مقابلے میں ن لیگی امیدوار وں کو ٹکٹ جاری

اسلام آباد(ایجنسیاں ،دھرتی نیوز) پاکستان مسلم لیگ(ن)نے آئندہ عام انتخابات میں سابق وزیرِ داخلہ چودھری نثار علی خان کیلئے میدان کھلا چھوڑنے کا فیصلہ نہ کرتے ہوئے اپنے امیدوار وں کو مقابلے کیلئے میدان میں اتاردیا ہے۔ سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار نے الیکشن 2018میں آزاد حیثیت سے حصہ لینے کا اعلان کیا ہے۔ مسلم لیگ(ن) نے چوہدری نثار کے مقابلے میں تمام حلقوں سے اپنے امیدوار میدان میں اتاردئیے ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق مسلم لیگ (ن)نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 59اور پی پی 10کے لیے راجہ قمرالاسلام کو ٹکٹ جاری کر دیا جب کہ ممتاز خان کو این اے 63 کے لیے ٹکٹ جاری کیا گیا ہے۔ (ن) لیگ کی جانب سے پی پی 13 سے چوہدری سرفراز افضل، پی پی 19سے ذیشان صدیق بٹ کو ٹکٹ جاری کیاگیا ہے ٓمسلم لیگ(ن)نے پی پی 20 سے راجا سرفراز اصغر اور پی پی 12کے لیے فیصل قیوم ملک کو پارٹی ٹکٹ دیا ہے۔ اس سے قبل اطلاعات تھیں کہ مسلم لیگ (ن) چوہدری نثار کے مقابلے میں اپنے امیدوار کھڑے نہیں کرے گی۔یاد رہے کہ چوہدری نثار علی خان قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 59، این اے 63اور صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 10اور پی پی 12سے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن کے قائدنوازشریف چوہدری نثار کو پارٹی ٹکٹ دینے پر رضامند ہوگئے تھے۔چوہدری نثار کے بیان کے بعد صورتحال بگڑ گئی۔مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے اپنے بھائی کو چوہدری نثار کو ٹکٹ دینے پر قائل کرلیا تھا۔چوہدری نثار کو پارٹی ٹکٹ دینے پر سینئر رہنماوئں کو خوشگوار حیرت ہوئی۔نواز شریف نے شرکاءسے گفتگو میں کہا کہ چوہدری نثار کو ٹکٹ دینے پر اس لئے راضی ہوا ہوں کہ مجھے تیس سال کے تعلق کا پاس ہے،شہباز شریف نے بہت مثبت کردار ادا کیا ہے۔مسلم لیگ ن کے ذمہ دار ذرائع کے مطابق خواجہ سعد رفیق،رانا ثنااللہ کی موجودگی میں شہباز شریف نے قریبی ساتھیوں کو بتایا کہ نوازشریف کی مہربانی ہے کہ وہ میرے بار بار اصرار پر چوہدری نثار کو ٹکٹ دینے پر رضامند ہوگئے تھے مگر چوہدری نثار کے تنقیدی بیان نے صورتحال کو مزید خراب کردیا۔پارٹی کی سینئر قیادت نے چوہدری نثار اور ان کے خاندان کے اہم فرد سے رابطہ کرکے بیان سے متعلق دریافت کیا تو چوہدری نثار نے جواب دیا کہ انہوں نے بیان کی تردید کردی ہے،مگر اخبارات میں کوئی تردید نہیں چھپی۔اگلے روز شہباز شریف نے پارٹی میٹنگ میں چوہدری نثار کے ٹکٹ سے متعلق نوازشریف سے اپنی مشاورت کا ذکر کیا اور بتایا کہ نوازشریف چوہدری نثار کو ٹکٹ دینے پر قائل ہوگئے تھے مگر اسی روز چوہدری نثار نے عورت کی حکمرانی سے متعلق بیان دے دیا۔