پیر 19 نومبر 2018ء
پیر 19 نومبر 2018ء

کتے کو پی ٹی آئی کا جھنڈہ لپیٹ کر ہلاک کرنے والے گرفتار

بنوں (دھرتی نیوز،بی بی سی )خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں میں پولیس نے مبینہ طور سیاسی انتقام لینے کے لیے ایک کتے کو تشدد کے بعد ہلاک کرنے کے الزام میں دو ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔ان افراد پر جانوروں کے حقوق کی خلاف ورزی اور سیاسی جماعت کی ہتکِ عزت کرنے کا الزام ہے۔جمعے کو بنوں میں کتے کو ہلاک کرنے ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوی تھی۔ اس ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک شخص کتے کو پاکستان تحریک انصاف کے جھنڈے میں لپیٹ کر اس پر فائرنگ کرتا ہے۔کتے کو ہلاک کرنے کی یہ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سوشل میڈیا پر اس پر بہت بات ہوئی اور مختلف افراد نے اسے جانوروں کے حقوق کی خلاف ورزی قرار دیا۔بنوں ضلع کے پولیس افیسر خرم رشید نے بی بی سی کے نامہ نگار اظہاراللہ کو بتایا کہ کتے کو مارنے کی الزام میں چار ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے اور ا±ن پر پاکستان پینل کوڈ کے دفعات نمبر 429,500,504,506 اور 34 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔یاد رہے کہ تعیزاتِ پاکستان کی دفعہ 429 جانوروں کو مارنے، زہر دینے کے حوالے سے ہے اور اس جرم میں زیادہ سے زیادہ سزا پانچ سال قید ہے۔ جبکہ دفعہ 500 ہتک عزت کے مرتکب ملزمان کے بارے میں جس کی سزا دو سال قید ہو سکتی ہے۔مقدمے میں امن عامہ میں خلل ڈالنے کی دفعات بھی شامل ہیں۔تھانے میں درج کی گئی ایف آئی ار کے مطابق ملزمان نے ایک بے زبان جانور کو بے دردی سے ہلاک کیا ہے جبکہ دوسری طرف ایک ’منظم‘ سیاسی جماعت پاکستان تحریک انصاف کی ہتک عزت بھی کی ہے۔ایف آئی آر کے مطابق ’ملزمان نے امن و عامہ میں خلل ڈالنے اور انتشار پھیلانے کی کوشش کی اور ورکرز کو ایک خاموش دھمکی بھی دی ہے۔‘پاکستان میں مبینہ طور ’جانوروں کو سیاسی انتقام‘ کا نشانہ بنانے کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔اس سے قبل ملک میں عام انتخابات سے قبل کراچی میں ایک گدھے پر ایک سیاسی پارٹی کے کارکنان نے شدید تشدد کیا تھا۔جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والے اداروں نے اس گدھے کا علاج کیا لیکن شدید تشدد کی وجہ سے وہ بچ نہیں سکا۔