بدھ 04  اگست 2021ء
بدھ 04  اگست 2021ء

تیرویں ترمیم س”اے ٹی ایم“ بند ہوئی ہیں،وزیر اعظم آزاد کشمیر

باغ (پی آئی ڈی) وزیراعظم آزاد جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کی باغ آمد‘ عوام علاقہ کی جانب سے باغ کی تاریخ کا سب سے بڑا استقبال، باغ بائی پاس روڈ سے لیکر ریڑہ تک سینکڑوں گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں پر مشتمل بہت بڑے جلوس کی صورت میں وزیراعظم آزاد کشمیر کو جلسہ گاہ لایا گیا، باغ شہر میں داخل ہوتے ساتھ ہی لیگی کارکنان اور عوام الناس قافلوں کی صورت میں استقبال کرتے ہوئے وزیراعظم آزاد کشمیر کے قافلے میں شامل ہوتے رہے اور باغ شہر کے قریب جلسہ گاہ پہنچنے سے قبل ہی وزیراعظم کا قافلہ بہت بڑے عوامی اجتماع کی شکل اختیار کر گیا، مسلم لیگ ن یوتھ ونگ کے نوجوانوں اہلیان باغ نے فلک شگاف نعرے بلند کرتے ہوئے راجہ محمد فاروق حیدر خان کا خیرمقدم کیا،فضاء جئے فاروق حیدر، جئے نواز شریف اور جیئے میر اکبر کے نعروں سے گونجتی رہی، دہڑے بازار میں بھی وزیر اعظم آزاد کشمیر کا پرتپاک استقبال کیا گیا اور پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں، وزیر اعظم آزاد کشمیر نے ریڑہ پل کا افتتاح کیا، افتتاح کے لیے آنے پر شاندار آتش بازی کرکے وزیر اعظم کا خیر مقدم کیا گیا، وزیر جنگلات سردار میر اکبر خان نے ٹرک پر سوار ہو کر وزیر اعظم آزاد کشمیر کے خیر مقدمی جلوس کی قیادت کی، سینئر وزیر چوہدری طارق فاروق، وزیر صحت ڈاکٹر نجیب نقی بھی وزیر اعظم کے ہمراہ تھے۔جلسہ گاہ میں تل دھرنے کی جگہ نہیں بچی، لوگوں نے چھتوں پر کھڑے ہو کر وزیر اعظم آزاد کشمیر کا خطاب سنا۔ باغ جلسہ عام میں راجہ محمد فاروق حیدر خان نے عوام الناس کی جانب سے تاریخ ساز استقبال کرنے پر شکریہ ادا کیا۔ وزیر اعظم آزادکشمیر نے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر پاکستان اور ہندوستان کے درمیان کھیل کا میدان نہیں،یہاں سوا کروڑ لوگ رہتے ہیں،1947 میں صرف جموں میں 2 لاکھ 37 ہزار کشمیری شہید ہوئے،2500 کشمیری 1953 میں جب شہید ہوئے جب شیخ عبداللہ کو نکالا گیا، 1 لاکھ کشمیری تحریک آزادی میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر چکے ہیں، 11 ہزار کشمیری ماوں بہنوں کی عصمتیں لوٹی گئیں، 22 ہزار بیوہ ہیں، سینکڑوں لاپتہ ہیں، ساڑھے چھ ہزار بے گمنام قبریں ہیں، کشمیری قیادت عقوبت خانوں میں ہے، ایسے حالات میں ہم خاموش نہیں رہ سکتے۔ ہندوستان نے کشمیر کو معاشی طور پر بدحال کر دیا ہے، عمران خان اس بات کی وضاحت کریں کہ مسئلہ کشمیر کے پائیدار حل سے کیا مراد ہے؟ آیا اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق استصواب رائے یا تقسیم کشمیر کی یا خودمختار کشمیر۔ ہمارا تعلق کسی حکومت کے ساتھ نہیں ریاست پاکستان کے ساتھ ہے، ایسے اقدامات نہ کریں جس سے آنے والی نسل پاکستان سے دور ہو جائے۔ آنا والا الیکشن انتہائی اہم ہے۔سیاست کے اندر غیرت ختم ہوتی جارہی ہے، تیرویں ترمیم سے افراتفری نہیں کھانے پینے کی دوکانیں اے ٹی ایم بند ہو گئی،الیکشن میں جانے سے قبل گزشتہ الیکشن کا منشور لیکر عوام کے پاس جائیں گے اور کارکردگی دکھائیں گے،  ختم نبوت کے سپاہی یہ جھنڈا کسی اور کو نہیں لینے دینگے، اسمبلی میں صرف مسلم لیگ ن کے اراکین تھے جب ختم نبوت پر ووٹنگ ہوئی، مذہب کے نام پر سیاست کرنے والوں کو بتا دینا چاہتا ہوں کہ ہم نے جو کام کیے کسی اور نے نہیں کیے۔ایک صاحب نے کہا کہ ختم نبوت کے قانون کی منظوری سے اس پار منفی تاثر جائیگا، ختم نبوت کے نام پر سیاست کرنے والے اس کے خلاف کام کرنے والوں کے غیر دانستہ ہاتھ مظبوط نہ کریں۔    

آج کااخبار

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کالم